0
My Cart - 0 items
  • No products in the cart.

Gorakh Paan/ گورکھ پان

-25%

Gorakh Paan/ گورکھ پان

مختلف نام:اردو گورکھ پان- ہندی کھڑی ٹنڈو،سفید پھول، گورکھ پان اور لاطینی میں ہولی ٹروپیم بریوی فولیم(Holi Tropium Brevi Folium)کہتے ہیں۔

مقام پیدائش:ہند، بنگلہ دیش اور پاکستان کے تمام علاقوں خصوصاً پنجاب اور ہریانہ میں عام ہوتی ہے۔ اس کا استعمال سالم بوٹی کی صورت میں کیا جا سکتا ہے۔

شناخت:ہمارے علاقہ میں گورکھ پان کے نام سے جو بوٹی مشہور ہے وہ ریگستانی علاقہ میں ہوتی ہے۔ یہ زمین سے قدرے اٹھی رہتی ہیں۔ اس کے پتے چوڑے چوڑے و گھنےہوتے ہیں۔ شاخیں گنجان ہوتی ہیں اور ہر شاخ کے سرے پر ایک ننھا سا سفید پھول ہوتا ہے۔ چونکہ اس کے پتے چبانے سے منہ لال ہو جاتا ہے اس لئے اسے گورکھ پان کہتے ہیں۔

From 60

Category:

مزاج:سرد و خشک۔ یہ زبردست مصفی خون ہے۔ اس کے خواص مندرجہ ذیل ہیں:

کمزوری دماغ:گورکھ پان 10 گرام، مرچ سیاہ پانچ دانہ، الائچی خورد{ چھوٹی}پانچ عدد، مغز بادام 20عددد۔ گھوٹ کر پلائیں۔ موسم گرما میں، زبردست مقوی دماغ ہے۔

بواسیر خونی:گورکھ پان 10 گرام، مرچ سیاہ پانچ عدد،رگڑ کر پلائیں۔ دو تین روز میں فائدہ ہوگا۔دو تین ہفتہ استعمال کرنے سے بواسیر کو ہمیشہ کے لئے آرام آجاتا ہے۔

درد قولنج:بوٹی گورکھ پان 9گرام،سونٹھ3گرام۔دونوں کو گھوٹ کر چھان کر پلائیں۔ قدرے نمک ملا لیں۔ گورکھ پان 10 گرام، مرچ سیاہ پانچ عدد گھوٹ کر75 گرام پانی ملا کر چھان کر پلائیں۔ خرابی خون اور زہریلے امراض میں ازحد مفید ہے۔

موسمی بخار:بوٹی گورکھ پان 10 گرام، پانی 100 گرام میں بھگو کر رکھ دیں، صبح چھان کرقدرے مصری ملا کر پلائیں۔ اس طرح شام کو بھی استعمال کریں۔ اگر بیٹھے سے رغبت نہ ہو تو پھیکا ہی نتھار کر پی لیں۔ موسمی بخار کے لئے ازحد مفید و مجرب ہے۔

بواسیر خونی: گورکھ پان کے پتے 10 گرام، پانی میں پیس کر اس میں20 گرام شربت انجبار ملا کر پلائیں، فوراًخون بند ہوگا۔

منہ کے چھالے:گورکھ پان کے پتے 20 گرام کو 250 گرام پانی میں ابال کر کلیاں کرائیں۔

ملیریا بخار:گورکھ کے پتے 10 گرام، کالی مرچ سات عدد، دن میں تین بار پلائیں۔ پرانے بخاروں میں جہاں نوا کونین یا کاماکونین فیل ہو جائیں وہاں اس کے پلانے سے فوری آرام آجاتا ہے۔

کان درد:گورکھ پان کے پتوں کا رس دو تین بوند گرم کرکے کان میں ڈالنے سے کان دردکو آرام آجاتا ہے

کوہستانی باشندے اس گورکھ پان بوٹی کا استعمال ہر بخار میں کرتے ہیں۔9گرام  بوٹی لےکر 150 گرام پانی  میں گھوٹ کرنمک ملا کر مریض کو پلاتے ہیں اگر نمک پسند نہ کرے تو بلا نمک دیتے ہیں۔ کبھی کالی مرچ چار پانچ عدد بھی شامل کرتے ہیں۔ اگر سر درد ہو تو اس کو گھوٹ کر پیشانی پر ضماد کرتے ہیں لیکن اس میں دو گرام سونٹھ یا ادرک شامل کر کے لیپ کرتے ہیں۔ اس کے پینے سے دو تین دست آکر بخار فوراً دور ہو جاتا ہے۔

شربت گورکھ پان:گورکھ پان 250 گرام کو دو کلو پانی میں جوش دیں۔ جب پانی آدھا رہ جائے تو صاف کریں اور مصری ایک کلو ملا کر شربت کا قوام کریں۔ یہ شربت دل کی تقویت کے لئے مفید ہے۔ دل کی گھبراہٹ کو دور کرتا ہے۔ خوراک 20 گرام صبح اور 20 گرام شام کو دیں

فساد خون:گورکھ پان ایک کلو،شاہترہ آدھاکلو،عشبہ،منڈی،گل بنفشہ،کرایتہ ہرایک 250گرام۔

سب کو 12 کلو پانی میں آٹھ پہر تر کرکے چھ بوتل عرق نکالیں۔ یہ زبردست مصفئ خون ہے۔ خوراک 50 گرام صبح و شام دیں۔

دیگر:گورکھ پان دس گرام،سرپھوکہ سات گرام،گل گاوزبان 5 گرام، عناب سات عدد، برادہ صندل سفید تین گرام، رات کو گرم پانی میں تر کرکے صبح صاف کرکے مصری 20 گرام ملا کر نوش کریں۔ زبردست مصفئ خون ہے، فرحت لاتا ہے،دل کو طاقت دیتا ہے۔ ایسی ایک خوراک روزانہ دیں۔

Form

Whole, Powder

Weight

50gm, 100gm, 250gm, 500gm

Reviews

There are no reviews yet.

Be the first to review “Gorakh Paan/ گورکھ پان”

Your email address will not be published. Required fields are marked *